Health Tips Symptoms and Treatment

Marz Ki Dawa Kere Koi

[vc_row][vc_column][vc_column_text dp_text_size=”size-3″]

Marz Ki Dawa Kere Koi

مرض کی دوا کرے کوئی

Marz Ki Dawa Kere Koi
مسعود چوہدری
ڈاکٹر صاحبان کو ادویات کو کمپنی نیم کے بجائے سالٹ بیسڈ نسخہ تحریر کرنے کا پابند کیا جائے اور ادویات کی پیکنگ اور ادویات کے نام سالٹ بیسڈ ہو جانے چاہیئں۔۔۔۔۔ نہ صرف ادویات سستی ہو جائیں گی بلکہ لوگ ادویات کو بغیر نسخہ اور ڈاکٹر کی ہدایت کے بغیر نہیں استعمال کر پائیں گے۔۔۔۔ مثال سے وضاحت کر دیتا ہوں۔

برطانیہ کے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ کی ایک ریسرچ تحقیق کار ڈاکٹر ملیسا سمار کی
اہم تحقیق آن لائن جریدے ”ہیومن ریپروڈکشن“ میں شائع کی گئی جس میں پیراسٹامول، جسے ہمارے ہاں پیناڈول کے نام سے بھی فروخت کیا جاتا ہے، کے بارے میں تفصیلی تحقیق کی گئ اور مردوں کو بانجھ بنانے میں اس کے کردار پر تفصیل سے روشنی ڈالی گئ۔

چونکہ میرا مطمع نظر بانجھ پن سے متعلق تحقیق کو زیر بحث لانا نہیں لہذا میں مدعے کی بات سمجھا کر اجازت لیتاہوں۔

اس دوا کو ہمارے ہاں درد یا بخار سے نجات کے لئے ہر کوئی استعمال کرتا نظر آتا ہے لیکن بہت کم لوگ جانتے ہیں کہ اس دوا کی کیمیائ ترکیب C8H9NO2ہے۔ جبکہ کیمسٹ اسے acetaminophen کے نام سے بھی جانتے ہیں۔ جبکہ پوری دنیا میں یہ پیراسٹامول، پیناڈول، کالپول، ٹائیلینول، اور دیگر تقریباً تین سو مختلف برانڈز کے نام سے فروخت کی جارہی ہے جبکہ صرف چین ایک واحد ایسا ملک ہے جہاں اسیٹامینوفین کے نام سے ہی فروخت ہو رہی ہے۔درحقیقت چین ہی وہ ملک ہے جس کا ماڈل جزوی طور پر فولو کرنے کی جانب میں نشاندہی کر رہا ہوں۔ کلی طور پر کیوں نہیں؟ ہر سسٹم کے اپنے کچھ نقائص ہیں اور یہ نقائص چین کے مکمل نظام میں بھی ہیں۔ اس پر گفتگو کسی اور تحریر کی زینت بنائوں گا۔ ویسے بھی ابتدائی طور پر ہم اتنا چھوٹا سا ہی کام کر لیں تو بہت زیادہ ہے۔پوراسسٹم اڈاپٹ کرنے میں شاید ہمیں ایک صدی لگ جائے۔بہرحال پاکستان میں پیناڈول کی اجارہ داری ہے اور باقی کسی بھی برانڈ کی رسائی نہیں۔ اور چونکہ دوا کی اصلیت کے بجائے اسکے برانڈ نام پر زور دیا جاتا ہے تو جو کوئی بھی سستی دوا کی فروخت کی کوشش کرتا ہے وہ کاروبار سے باہر ہو جاتا ہے کیونکہ آپ کو اگر پیناڈول سے آرام آتا ہے تو دو سے چار گھنٹے تک آپ کو صرف پیناڈول سے ہی آرام محسوس ہو گا کسی اور نام کی دوا سے نہی کیونکہ آپ اپنے دماغ کو تیار کر چکے ہوتے ہیں کہ صرف اس سے ہی علاج ممکن ہے جبکہ یہ بھی عرض کر دوں کہ جو اجزاء اس دوا میں موجود ہیں یہ تمام اجزاء ہماری خوراک میں بھی شامل ہیں۔لیکن ہمیں کبھی ترغیب نہیں دی جاتی کہ ہم سر درد یا بخار کی صورت میں کچھ اچھا کھائیں۔ کیوں؟ کیونکہ اچھا کھانا تین چار سو میں پڑ سکتا ہے جبکہ ایک گولی تو ایک روپے کی ہی ہے شاید۔ لیکن دوائی کے سائڈ ایفیکٹس بھی ہیں۔ انکو سمجھنے کے لیئے یہ جان لیں کہ یہ ہی دوائی معمولی بخار سے کینسر جیسے مرض تک میں دیگر دواؤں کے ساتھ استعمال کروائی جاتی ہے کیونکہ دراصل دوائی کا نام نہیں اسکی کیمیائی ترکیب ہے جو کام کرتی ہے۔راقم مسعود چوہدری کوئی کیمسٹ یا ڈاکٹر تو نہیں جو حتمی بات تحریر کر سکے لیکن تحقیق سے کچھ معاملات عیاں ہیں جو پیش کیئے اور کر رہا ہوں۔2011 میں امریکہ میں سرکاری طور پر ایک کیمپین چلائی گئ جس کی تحریر تھی “Acetaminophen can cause serious liver damage if more than directed is used.”یعنی اسیٹامینوفین (یعنی پیناڈول اور دیگر) کا بتائ گئی مقدار سے زیادہ استعمال جگر کو تباہ کر دیتا ہے۔اس کیمپین کا کوئی فائدہ نہیں ہوا ۔ وجہ؟ کیونکہ کسی کو پتہ ہی نہیں تھا کہ اسیٹامینوفین کس بلا کا نام ہے کیونکہ وہاں بھی پاکستان کی طرح برانڈز بک رہے ہیں نہ کہ دوائی۔ یہ ضرور ہے کہ امریکہ میں 325 ملی گرام سے زائد کے استعمال کو ممنوع قرار دیا جا چکا ہے۔یہ بھی عرض کر دوں کہ اس دوا کا استعمال الکوحول یعنی شراب نوشی کے درمیان استعمال کی صورت میں جگر کو عام حالات سے کئ گنا زیادہ نقصان پہنچاتا ہے۔صرف ایک سال 2011 میں بیلجئم میں 56000 ایسے جگر کے کینسر کے مریض سامنے آئے جنہوں نے اسیٹامینوفین کو الکوحل کے استعمال کے دوران استعمال کیا۔ اس کے سائڈ ایفیکٹس پر ایک الگ سے تحریر لکھی جا سکتی ہے۔ یہ صرف ایک عام سی دوا پرمختصر ترین گفتگو تھی۔ہر دوا پر اسی طرح کی سینکڑوں تحاریر باآسانی ممکن ہیں۔ جناب ہمارے ہاں تو باوا آدم ہی نرالا ہے۔جس دوائی کو دنیا میں جگہ نہیں ملتی اور وہ مضر صحت بھی گردان دی جائے اسے بھی چند سیکنڈوں میں عوام میں دے دیا جاتا ہے۔ وجہ؟ صرف کمپنی کا نام دیکھا جاتا ہے اور کچھ نہیں جبکہ لائسنس کا اجراء اور سمپل ٹیسٹ کیمیکل فارمولا کا ہونا چاہیئے نہ کہ کمپنی لوگو کا۔ اس کے ساتھ ہی ساتھ ادویات کی مقدار کا تعین بھی انتہائی ضروری ہے۔ اکثر اوقات ڈاکٹر صاحبان کو چند ملی گرام کی کسی فارمولہ میں ضرورت ہوتی ہے لیکن دوا کی عدم دستیابی کے باعث وہ زیادہ ماہیت کی مالک دوا کی شمولیت فارمولہ میں کر دیتے ہیں جس سے لاتعداد نقصانات ہوتے ہیں۔عام سی غیر اینٹی بائیوٹک کے رونے ہی نہیں ختم ہو سکتے، یقین مانیئیے مکمل اینٹی بائیوٹک کے استعمال پر ہونے والے نقصانات کی گفتگو غیر اینٹی بائیوٹک کی گفتگو سے کئ گنا طویل ہے۔ ابتداء کے طور پر یہاں سے شروع کیا جا سکتا ہے کہ ڈاکٹر صاحبان کو ادویات کو کمپنی نیم کے بجائے سالٹ بیسڈ نسخہ تحریر کرنے کا پابند کیا جائے اور تمام نظام اسی کے مطابق ترتیب دیا جائے۔دوا کی مالیت کا تعین بھی اسی سالٹ بیس پر کیا جائے۔ یقین مانیئے بہت سی ادویات جن کا سالٹ اور کام بالکل ایک ہی ہے انکی مالیت میں زمین آسمان کا فرق ہے۔ چھوٹے بھائی کالم نگار وقار اسلم نے بتایا کہ اسے لیووفلوکسیسین Cravit کے نام سے اسے دی گئی جس کی قیمت leflox سے تین گنا ہے جبکہ صرف کمپنیوں کے نام کا فرق ہے اور یہ بھیڈ چال جاری ہے مریض مہنگے داموں دوا لینے پر مجبور ہیں۔ں۔

تاریخ اشاعت: 2019-01-10

Marz Ki Dawa Kere Koi By Massoud Chaudhary
The doctor should be banned from writing semi-based prescription instead of company and medicines and medicines should be named Salt based ….. Not only will medicines be cheaper, but people will not be able to use drugs without prescription and doctor’s guidance …. Explain by example.

Marz Ki Dawa Kere Koi  Dr. Malissa Samar, a research researcher from the National Institute of Health UK
The main research was published in the online journal “Human Reproductive”, which has detailed research on Parastamol, which is also sold by us as Pinnedul, and detailed light on the role of man to interfere. Have been stolen.
Because my consent is not to discuss interrupting research, so I will be allowed to understand the subject matter.

Marz Ki Dawa Kere Koi  This medicine seems to be used by everyone to save us from pain or fever, but very few people know that this combination of chemical composition is C8H9NO2. While chemists know it as the name of acetaminophen. In the whole world, this parastamol, pineodol, colol, tylenol, and other nearly 300 different brands are being sold in the name of the world, while China is the only country where the sale of Asatamenophen is being sold.
Marz Ki Dawa Kere Koi In fact, China is the country whose model is partially pointing to the procession. Why not? Each system has some defects and these defects are also in China’s complete system. Talking to him will make any other writing. Anyway, initially, if we do so much work then it is too much. We might take one century to make the post-prostitute adapter.
Marz Ki Dawa Kere Koi However, there is a monopoly of Pennolol in Pakistan and no other brand is accessible. And since the brand name is emphasized on the brand name instead of the origin of the drug, anybody who tries to sell cheap cheaper drugs gets out of business because if you get comfortable with the pineapple, you can do it for two to four hours. You will only feel relaxed from Pennol only because of some other medication because you have developed your mind that it is possible to treat only it, but also to confirm that the ingredients are present in this medicine. The ingredients are included in our diet.
Marz Ki Dawa Kere Koi But we are never encouraged to eat something good if we are headache or fever. Why? Because good food can be done in three hundred and one tablet is only one rupee. But there are also medicinal side effects. To understand them, be aware that this medicine is used with other medicines from a minor fever to other patients, such as medication, which is not a chemical composition that works.
Marz Ki Dawa Kere Koi Rakim Masood Chaudhary is no chemist or doctor who can write the final word but there are some issues related to the research which are presented and doing. In 2011, a campus was officially run in the United States, written by “Acetaminophen can cause serious Liver damage if more than directed is used. “It uses excessive amount of otitamenophen (i.e. pneumol and other) to destroy the liver.
Marz Ki Dawa Kere Koi This campus did not benefit. Reason? Because nobody knew that the name of Asataminoffin is called because there are also branded brands like Pakistan or medicines. It is important that more than 325 millimeters of use in the United States have been prohibited. Also, the use of this medicine is used to prevent excessive damage from normal conditions in case of alcohol use. Arrives
Marz Ki Dawa Kere Koi Only one year in Belgium, in 2011, 56,000 patients of liver cancer who came to use atataminephen used alcohol during the use of alcohol. A separate written letter can be written on its side effects. This was just one of the most commonly known drug addictions.There are hundreds of prescriptions of the same medicine every possible. Sir, we are innocent of ours.
Marz Ki Dawa Kere Koi The medicine which does not get place in the world, and even if it is hazardous, it is also given in the public in a few seconds. Reason? Only the name of the company is seen and nothing else, while the release of the license and the proper test should be of a chemical formula, not the company’s logo. Along with this, determining the quantity of medicines is also very important. Often times a doctor needs a few millimeters of a few millimeters, but due to non-availability of medicines, they do more than one-month-old owner’s drug formulas, which result in substantial losses.
Marz Ki Dawa Kere Koi Commonwealth of non-biotech can not be overwhelmed, because of the disadvantages of the use of complete anti-biotech use is far more than an antibiotic conversation. Initially, it can be started from here that the doctor should be banned to write medicine based semi-document rather than half of the company and all systems should be made accordingly.
Determination of medication should also be done on the same year basis. Believe in many medicines whose salts and work are exactly the same as the sky is the difference between heaven and earth. The younger brother columnist Prakash Aslam said it was given to him by the name Leavoflucassinine Cravit, which is three times leflox, while companies are only the names of the names and this trend is ongoing, patients are forced to take expensive medicines.

Date published: 2019-01-10

Source UrduPoint[/vc_column_text][/vc_column][/vc_row]

Tags
Show More

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Close